پاکستان اور چین کا 2019ء کو اقتصادی تعاون کا سال قرار دینے پر اتفاق

171

اسلام آباد: پاکستان اور چین نے 2019ء کو اقتصادی تعاون کا سال قرار دینے پر اتفاق کیا ہے، جس کا مقصد صنعتی تعاون کا فروغ اور گوادر پورٹ کو عالمی معیار کے برابر لانا ہے۔ سی پیک سیکرٹریٹ کے حکام نے ’’اے پی پی‘‘ کو بتایا کہ پاکستان اور چین نے سی پیک کے تحت مشترکہ منصوبوں اور برآمدات کو فروغ دے کر 2019ء کو اقتصادی تعاون کا سال قرار دینے پر اتفاق کیا ہے۔
صنعتی تعاون کے بارے میں آٹھویں مشترکہ رابطہ کمیٹی میں منظور ہونے والی مفاہمت کی یادداشت ٹیکسٹائل، پیٹرو کیمیکل، لوہے اور سٹیل جیسی اہم صنعتوں کے حوالے سے رابطوں کو فروغ دینے کے لئے لائحہ عمل فراہم کرتی ہے جو چینی سرمایہ کاروں کو اپنے کاروبار کو منتقل کرنے اور پاکستان میں سرمایہ کاری کے مواقع کی تلاش کے لئے حوصلہ افزائی کرتی ہے۔
حکام کے مطابق پاکستان مختلف شعبوں میں چینی سرمایہ کاری کیلئے بہترین ملک بن سکتا ہے۔سی پیک کے تحت مواقع کی تلاش میں چینی سرمایہ کاروں کو وزارت منصوبہ بندی سہولت فراہم کرے گی۔حکام کے مطابق حکومت پاکستان ان پالیسیوں پر کام کر رہی ہے جن سے کم وقت میں کاروبار کیلئے آسانی میں بہتری آئے گی۔حکام کے مطابق دونوں فریقوں نے زراعت، تعلیم، طبی علاج، غربت کے خاتمے، پانی کی فراہمی اور پشیہ وارانہ تربیتی منصوبوں سمیت پہلے سے طے کردہ اقدامات پر فوری عملدرآمد کیلئے طریقہ کار تیار کرنے پر بھی اتفاق کیا ۔
حکام کے مطابق جے سی سی سے اہداف کا حصول اور سی پیک کو وسعت دینے کا عمل ممکن ہوا۔ اس حوالے سے گزشتہ ہفتے پاکستان میں چین کے سفیر یائو جنگ اور وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی ترقی و اصلاحات و شماریات مخدوم خسرو بختیار کے درمیان ملاقات ہوئی تھی جس میں اس پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا اور سال 2019ء کو صنعتی و معاشی اور زرعی تعاون کا سال قرار دیا گیاہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here