بینک ڈیپازٹس کے منافع پر ٹیکس وصولی کی شرح میں رواں مالی سال کی پہلی ششماہی میں 250 فیصد اضافہ

567

اسلام آباد: رواں مالی سال 2018-19ء کی پہلی ششماہی میں جولائی تا دسمبر 2018ء کے دوران بینک ڈیپازٹس پر حاصل ہونے والے منافع پر ٹیکس وصولی کی شرح میں 250 فیصد کا اضافہ ہوا ہے اور اس دوران 800 ملین روپے کا ٹیکس وصول کیا گیا ہے جبکہ گذشتہ مالی سال میں جولائی تا دسمبر 2017ء کے دوران بینکوں میں جمع کرائی گئی رقوم سے حاصل ہونے والے منافع جات وغیرہ پر ٹیکس وصولیوں کا حجم 228 ملین روپے رہا تھا۔
اس طرح گذشتہ مالی سال کے مقابلہ میں جاری مالی سال کے پہلے چھ ماہ کے دوران ٹیکس وصولیوں میں 572 ملین روپے یعنی 250 فیصد کا نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ اقتصادی تجزیہ کاروں نے کہا ہے کہ بینک ڈیپازٹس پر حاصل ہونے والے منافع جات کی شرح میں اضافہ سے نہ صرف ٹیکس وصولیاں بڑھیں گی بلکہ اس سے بچتوں کے کلچر کی حوصلہ افزائی ہوگی۔
انہوں نے مزید کہا کہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق دسمبر 2018ء کے اختتام پر بینکوں میں جمع کرائی جانے والی رقوم کی شرح میں 8 فیصد کا اضافہ ہوا ہے اور ڈیپازٹس کا حجم 13.35 کھرب روپے تک بڑھ گیا جبکہ دسمبر 2017ء کے اختتام پر بینکوں میں جمع کرائی جانے والی رقوم کا حجم 12.36 کھرب روپے رہا تھا۔
انہوں نے کہا کہ بچتوں کے رجحان میں اضافہ سے قومی معیشت کی ترقی میں معاونت حاصل ہوگی اور لوگوں کی آمدن بھی بڑھے گی جس سے مارکیٹ اکانومی پر خوشگوار اثرات مرتب ہوں گے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here