عبدالرزاق داؤد کی کمپنی نے مہمند ڈیم ٹھیکے کیلئے بولی جیت لی

وزیراعظم عمران خان کے مشیر برائے صنعت و تجارت عبدالرزاق داؤد کی ملکیتی کمپنی 'ڈیسکون' نے مہمند ڈیم کی تعمیر کا ٹھیکا حاصل کرنے کے لیے بولی جیت لی، یہ بولی چین کی ایک کمپنی کے اشتراک سے دی گئی تھی۔

331

رپورٹس کے مطابق وزیراعظم کے مشیر عبدالرزاق داؤد کی ملکیتی کمپنی ڈیسکون اور چین کی کمپنی چائنہ گیزوبا پر مشتمل جوائنٹ وینچر نے مہمند ڈیم کی تعمیر کا ٹھیکا حاصل کرنے کے لیے 309 ارب روپے کی بولی دی۔
عبدالرزاق داؤد نے وزیراعظم کا مشیر بننے کے بعد ڈیسکون کی چیئرمین شپ چھوڑ دی تھی اور اب ان کے بیٹے کمپنی کے چیئرمین ہیں۔
چیئرمین واپڈا نے تصدیق کی ہے کہ جوائنٹ وینچر ڈیسکون اور چائنا گیزوبا نے بولی جیت لی ہے اور کنٹریکٹر دس ہفتوں کے اندر منصوبے کی سائٹ پر سرگرمیاں شروع کردے گا۔
انھوں نے بتایا کہ دوسرا جوائنٹ وینچر فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن (ایف ڈبلیو او) اور پاور چائنا کا تھا، جو کامیابی حاصل نہ کرسکا۔
چیئرمین واپڈا نے بتایا کہ کامیابی بولی دہندہ سے بولی میں مزید کمی کے لیے بات چیت کا عمل جاری ہے۔
تاہم وزارت پانی و بجلی کے اعلیٰ حکام کا کہنا ہے کہ مہمند ڈیم کا منصوبہ جلد بازی میں شروع کیا جارہا ہے، کیونکہ اب تک زمین بھی حاصل نہیں کی جاسکی ہے اور کنسلٹنسی فرم کا تعین بھی ابھی کیا جانا ہے۔
مہمند ڈیم بنیادی طور پر سیلاب کو کنٹرول کرنے والا ڈیم ہے جس کی بجلی پیدا کرنے کی استعداد 800 میگاواٹ ہوگی۔
مہمند ڈیم میں 3 لاکھ کیوسک پانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش ہوگی اور اس کی تعمیر سے چارسدہ، پشاور اور نوشہرہ کو سیلاب سے محفوظ رکھا جاسکے گا۔
2003 میں اس منصوبے پر لاگت کا تخمینہ ایک ارب ڈالر تھا جو سابق صدر پرویز مشرف کے دور میں غیر ضروری تاخیر کی وجہ سے اب 3 ارب ڈالر تک پہنچ چکا ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here