قانون نافذ کرنے والے اداروں سے تعاون جاری رکھا جائے گا، سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن

219

سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان نے کہا ہے کہ سرمایہ کاروں کے تحفظ کے پیش نظر قانون نافذ کرنے والے اداروں سے تعاون جاری رکھا جائے گا۔ جمعرات کو ایس ای سی پی کے ترجمان کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں ایک جدید منصفانہ اور شفاف کپیٹل مارکیٹ کے قیام، کارپوریٹ سیکٹر کے فروغ اور سرمایہ کاروں اور عوام کے مفادات کے تحفظ کے پیش نظر کمیشن ملک میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ بھر پور تعاون کے لئے پر عزم ہے۔
ترجمان کے مطابق اس سلسلے میں وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی ای) نے کچھ کمپنیوں کے ریکارڈ تک رسائی کے لئے ایس ای سی پی سے رابطہ کیا۔ ایف آئی اے کی درخواست پر ایس ای سی پی نے فوری طور پر سنئیر افسران کو تعینات کیا اور ایجنسی کو مطلوبہ ریکارڈ تک رسائی فراہم کی گئی۔
ایجنسی کی جانب سے طلب کیا گیا ریکارڈ بھی اور بر وقت فراہم کر دیا گیا۔
قانون پر عمل درآمد کو یقینی بناتے ہوئے ریکارڈ کی فراہمی اور دفتر کے مختلف حصوں تک رسائی کے عمل کو دونوں اداروں کے باہمی تعاون کے ساتھ مکمل کیا گیا۔ ترجمان کے مطابق کارپوریٹ سیکٹر اور کپیٹل مارکیٹ کا اپیکس ریگولیٹر اور ریاست کا ایک ذمہ دار ادارہ ہونے کے ناطے، ایس ای سی پی ملک میں قانون کی عملداری کو قائم رکھنے کے لئے قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں سے تعاون جاری رکھے گا۔ اسی مقصد کے تحت ایس ای سی پی نے حال ہی میں بنائی جانے والی دو جائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی) کے لئے اپنے بہترین افراد فراہم کئے، وسائل اور تکنیکی تعاون فراہم کیا گیا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here