پاکستان ایشیاء میں‌غیر قانونی سگریٹ کی سب سے بڑی مارکیٹ، حکومت کو ٹیکس کی مد میں 43 ارب روپے سالانہ کا ٹیکہ

اوکسفرڈ اکنامکس کی رپورٹ کیمطابق سالانہ 8ارب میں سے 3ارب سے زائد سگریٹ کمپنیاں غیر قانونی طورپر فروخت کرتی ہیں

303

لاہور: حال میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان غیر قانونی سگریٹ کی ایشیا میں سب سے بڑی مارکیٹ بن چکا ہے۔

عالمی تجزیاتی ادارے اوکسفرڈ اکنامکس کی جانب سے رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ پاکستان میں سالانہ 8ارب سے زائد سگریٹ خریدے جاتے ہیں جس میں سے تقریبا 5ارب سگریٹ قانونی لسٹڈ کمپنیاں فروخت کرتی ہیں جبکہ 3ارب سے زائد سگریٹ غیر قانونی طورپر تیار کرنے والی کمپنیاں فروخت کرتی ہیں. یوں قانونی طور پر 56فیصد سگریٹ فروخت ہو رہی ہیں جبکہ 40فیصد سے زائد غیر معیاری سگریٹس فروخت کی جارہی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق غیرقانونی طور پر سگریٹ تیار کرنے والی کمپنیاں انڈر انوائسنگ یا دیگر طریقوں سے ٹیکس ریونیو میں 43ارب روپے اور سیلز ٹیکس کی مد میں 15ارب روپے سے زائد ہڑپ کرجاتی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق پاکستان غیر قانونی سگریٹ کی فروخت میں پاکستان ایشیا کی سب سے بڑی مارکیٹ بن چکا ہے۔

حکومت کی جانب سے ملک میں تمباکو نوشی کی روک تھام کیلیے مرتب کی گئی پالیسی سے سگریٹ نوشی کے عادی افراد کی تعداد میں کمی نہیں ہوئی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here