’پاکستان عالمی گیمنگ اور اینی میشن انڈسٹری میں 8.4 ارب ڈالر کا حصہ حاصل کر سکتا ہے‘

اینی میشن، گیمنگ اور میڈیا کے شعبوں میں تعاون کے لئے وزارت اطلاعات و نشریات اور برطانیہ کی بورن موتھ یونیورسٹی کے مابین مفاہمت کی یادداشت پر دستخط

278

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ پاکستان کی اینی میشن انڈسٹری میں سالانہ 20 گنا اضافہ ہو رہا ہے، عالمی گیمنگ انڈسٹری اس وقت 550 ارب ڈالر کی مارکیٹ ہے، سال 2021ء کے آخر میں صرف اینی میشن انڈسٹری 300 ارب ڈالر کا ہدف عبور کر جائے گی، پاکستان اس میں 8.4 ارب ڈالر کا شیئر حاصل کر سکتا ہے۔

جمعرات کو اینی میشن، گیمنگ اور میڈیا کے شعبوں میں تعاون کے لئے وزارت اطلاعات و نشریات اور برطانیہ کی بورن موتھ یونیورسٹی کے مابین مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کی تقریب کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ بورن موتھ یونیورسٹی اور اس کا نیشنل سینٹر فار کمپیوٹر اینی میشن ٹیکنالوجی، میڈیا اور جرنلزم میں مہارت کے ساتھ عالمی سطح پر تسلیم شدہ اور اعلیٰ کارکردگی کا حامل ادارہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اینی میشن اور گیمنگ کے شعبہ میں کمپنیوں کے کاروبار میں اضافہ خوش آئند ہے۔ پاکستان کی 64 فیصد آبادی 25 سال اور 40 فیصد آبادی 20 سال سے کم عمر کی ہے، بورن موتھ یونیورسٹی کے ساتھ شراکت داری سے پاکستانی نوجوانوں کو اپنی صلاحیتوں کو فروغ دینے کا موقع میسر آئے گا۔

یہ بھی پڑھیے: پاکستان پہلی بار 200 ارب ڈالر کی ای سپورٹس انڈسٹری کا حصہ بن گیا

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ وزارت اطلاعات و نشریات بورن موتھ یونیورسٹی کے ساتھ مل کر پاکستانی نوجوانوں میں گیمنگ اور اینی میشن کے فروغ کے لئے اقدامات اٹھا رہی ہے۔ پاکستان میں اس وقت 200 سے زائد ٹی وی چینلز کام کر رہے ہیں جبکہ ڈیجیٹل چینلز کی تعداد میں روزانہ کی بنیاد پر اضافہ ہو رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں فلم اور ڈرامہ کے شعبہ میں بہت سے مواقع موجود ہیں، ہم فلم انڈسٹری کو فروغ دینے کے لئے اقدامات اٹھا رہے ہیں۔ ماسٹرز اور پی ایچ ڈی کے لئے سکالر شپس پروگرام شروع کئے جا رہے ہیں۔ بورن موتھ یونیورسٹی کی جانب سے تعاون کی فراہمی اس شعبہ میں ترقی کی نئی راہیں کھلیں گی۔

قبل ازیں مفاہمت کی یادداشت پر نیشنل میڈیا یونیورسٹی کی فوکل پرسن ثمینہ فرزین نے دستخط کئے۔ مفاہمت کی یادداشت میڈیا، اینی میشن اور گیمنگ کے شعبوں میں تعاون کیلئے راہ ہموار کرے گی۔

اس موقع پر بورن موتھ یونیورسٹی کے وائس چانسلر نے کہا کہ بورن موتھ یونیورسٹی کو پاکستان کی وزارت اطلاعات و نشریات کے ساتھ شراکت داری پر خوشی ہے، اس شراکت داری سے پاکستانی طلباء کو نئے مواقع میسر آئیں گے، ہم اس شعبہ میں پاکستان کے ساتھ مل کر کام کرنے کے منتظر ہیں۔

مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کے موقع پر وائس چانسلر بورن موتھ یونیورسٹی پروفیسر جان وینی، چیف آپریٹنگ آفیسر جم اینڈریو، ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ این سی سی اے ڈاکٹر رچرڈ، ایف ایم سی کے سینئر لیکچرر ڈاکٹر ریحان ضیا، ہیڈ آف انٹرنیشنل مارکیٹنگ اینڈ سٹوڈنٹ ریکروٹمنٹ اینڈریو برڈ اور انٹرنیشنل پارٹنر شپ ڈویلپمنٹ منیجر ڈاکٹر الاسٹیئر موریسن نے بذریعہ ویڈیو لنک شرکت کی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here