’2050ء تک جنوبی ایشیا میں تارکینِ وطن کی تعداد 6 کروڑ ہو جائے گی‘

موسمیاتی تغیروتبدل کے باعث 2030ء تک جنوبی ایشیا میں تین کروڑ 74 لاکھ افراد نقل مکانی پر مجبور ہوں گے، رپورٹ

234

بیجنگ: انٹرنیشنل ایکشن ایڈ آرگنائزیشن اور کلائمیٹ ایکشن نیٹ ورک ساﺅتھ ایشیا سمیت مختلف اداروں کی حال ہی میں جاری کردہ ایک تحقیقی رپورٹ کے مطابق 2050ء تک موسمیاتی تغیروتبدل کے باعث جنوبی ایشیا میں چھ کروڑ 20 لاکھ سے زائد افراد اپنے علاقوں کو چھوڑنے پر مجبور ہوں گے جن میں بھارتی مہاجرین کی تعداد چار کروڑ 50 لاکھ سے زائد ہو گی۔

اس رپورٹ میں جنوبی ایشیائی ممالک بنگلہ دیش، بھارت، نیپال اور سری لنکا میں موسمیاتی تبدیلی کی وجہ سے نقل مکانی کی صورتحال کا تذکرہ کیا گیا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ موجودہ معیار کے تحت 2030ء تک جنوبی ایشیا میں نقل مکانی کرنے والے افراد کی تعداد تین کروڑ 74 لاکھ اور 2050ء تک یہ تعداد چھ کروڑ 29 لاکھ ہو گی۔

تاہم اگر عالمی برادری کاربن کے اخراج میں کمی کے زیادہ سخت اقدامات اپنائے اور پیرس معاہدے کےطے شدہ ہدف کی حد میں عالمی درجہ حرارت میں اضافے پر قابو پایا جائے تو 2030ء اور 2050ء تک یہ تعداد بالترتیب دو کروڑ 25 لاکھ  اور تین کروڑ 44 لاکھ ہو سکتی ہے۔

رپورٹ میں ترقی یافتہ ممالک سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ گرین ہاس گیسز کے اخراج کو کم کرنے کے حوالے سے قائدانہ کردار ادا کریں اور قدرتی آفات سے بحالی میں ترقی پذیر ممالک کی مدد کریں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here