کے پی: بلیک میں آٹا فروخت کرنے والے 28 ڈیلرز کا کوٹہ معطل

149

پشاور: محکمہ خوراک کے حکام نے بلیک میں آٹا فروخت کرنے والے 28 ڈیلرز  کا کوٹہ معطل کر دیا۔

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا کے مشیر برائے خوراک میاں خلیق الرحمان اور محکمہ خوراک کے اعلیٰ حکام کی ہدایت پر ڈپٹی کمشنر پشاور محمد علی اصغر اور راشننگ کنٹرولر پشاور آفتاب عمر کی نگرانی میں اسسٹنٹ فوڈ کنٹرولرز نے شہر کے مختلف علاقوں میں قائم آٹا ڈیلرز کو چیک کیا اور سبسڈائز آٹے کی ترسیل سے متعلق انسپکشن کی اور سرکاری کوٹے کے تحت ملنے والے آٹے کے نرخوں بارے آگاہی حاصل کی۔

سرکاری کوٹے کے تحت آٹے کی ترسیل نہ کرنے اور بلیک میں آٹا فروخت کرنے پر محکمہ خوراک کے افسران نے برہمی کا اظہار کیا اور 28 ڈیلرز کا کوٹہ معطل کر دیا جبکہ مزید کارروائی کیلئے کیس ڈائریکٹر محکمہ خوراک محمد زبیر کو ارسال کر دیا۔

وزیراعلیٰ کے مشیر برائے خوراک میاں خلیق الرحمان نے محکمہ خوراک کے افسران کی جانب سے کی جانیوالی کارروائیوں پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ روزانہ کی بنیاد پر کارروائیوں کو جاری رکھیں اور عوام کو سبسڈائز آٹے کی ترسیل کو یقینی بنائیں تاکہ سرکاری کوٹے کے تحت آٹا ڈیلروں کو ملنے والے آٹے کے ثمرات عوام تک پہنچ سکیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ خوراک کے افسران بلا خوف و خطر کارروائیاں جاری رکھیں اور بڑے مگرمچھوں پر ہاتھ ڈالیں تاکہ عوام کو ریلیف مل سکے۔ حکومت عوام کو سبسڈائز آٹے کی ترسیل ہر صورت میں یقینی بنائیں گی جبکہ بلیک میں آٹا فروخت کرنیوالوں کے ساتھ کوئی رعایت نہیں کی جائے گا اور ان کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے گا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here