پاکستان کے ساتھ بارٹر ٹریڈ کےلئے تیار ہیں، ایران

پاک ایران تجارتی تعلقات کو مزید بہتر بنانے کی ضرورت ہے، پیٹرو کیمیکل، سٹیل اور ایل پی جی دے سکتے ہیں: ایرانی قونصل جنرل محمد رضا ناظری

237

لاہور: ایران نے کہا ہے کہ وہ پاکستان کے ساتھ بارٹر ٹریڈ کے لئے تیار ہے۔

ان خیالات کا اظہار ایرانی قونصل جنرل لاہور محمد رضا ناظری نے فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری (ایف پی سی سی آئی) کے صدر میاں انجم نثار کی زیرصدارت ایف پی سی سی آئی پاک ایران بزنس کونسل کے دوسرے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ایران کے تعلقات صرف پروٹوکول کی حد تک محدود نہیں، ایران کے ساتھ پاکستان تعلقات آج مزید مستحکم ہوئے ہیں، ایران پاکستان کے ساتھ تجارتی اور ثقافتی تعلقات کو بڑھانے کو تیار ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے مابین پٹروکیمیکل، ایل پی جی سمیت دیگر شعبوں میں مزید تعاون کی ضرورت ہے، مشکلات پہلے بھی تھیں اور آج بھی ہیں لیکن کاروبار کاروبار ہے، پاکستان کے نجی شعبے کو ایرانی قونصل خانہ لاہور سرمایہ کاری اور تجارت کے فروغ کے لئے ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کو تیار ہے۔

محمد رضا ناظری نے کہا کہ کورونا وائرس کے باعث ایران کے ثقافتی اور زیارات کا شعبہ متاثر ہوا، کورونا وائرس کے اثرات موجود ہیں، سیاحتی اور زیارتی شعبہ سے آمدن میں کمی ہوئی ہے۔ کوشش ہے کہ جلد پاکستان اور تہران کے مابین ہوائی سفر دوبارہ شروع ہو سکے۔

انہوں نے کہا کہ ایران پاکستان کے ساتھ دو طرفہ کے فروغ کے لیے تیار ہے، مشرق وسطیٰ میں ایران پٹرولیم مصنوعات بنانے والے والا سب سے بڑا ملک ہے۔ ایران ایل پی جی اور پٹرولیم کی دیگر مصنوعات پاکستان کو برآمد کرنے کے لیے تیار ہے۔ ایران پاکستان سے چاول، گوشت اور دیگر چیزیں بارٹر ٹریڈ کے تحت تجارت کرنے کو بھی تیار ہے۔

اس موقع پر ایف پی سی سی آئی کے صدر میاں انجم نثار نے کہا کہ ایف پی سی سی آئی اور کاروباری برادری تجارت کے فروغ کے لئے ہر ممکن اقدامات کرنے کو تیار ہے۔ جن شعبہ جات پر پابندیاں نہیں ہیں ان میں دو طرفہ تجارت کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ایران کے ساتھ تجارتی تعلقات بہت کم ہیں جن کو بڑھانے کی اشد ضرورت ہے، تجارتی تعلقات میں جو مسائل ہیں ان کو حل کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے، ایران کے ساتھ پاکستان کی تجارت کو بڑھانے کے لئے ہوائی، ریل، روڈ اور بحری ذرائع موجود ہیں، دونوں ممالک کو تجارت کے فروغ کے لئے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔

اجلاس میں ڈاکٹرمحمد رضا کرباسی، ڈی جی آئی سی سی آئی اے، ایف پی سی سی آئی کے نائب صدر زاہد اقبال چوہدری،کمرشل کونسلر علی اصغر، پاک ایران بزنس کونسل کے چیئرمین نجم الحسن جاوا، سینئر وائس چیئرمین سید علی رضا رضوی سمیت دیگر ممبران نے بھی دونوں ممالک کے درمیان باہمی تجارت کے فروغ کے لیے اپنی اپنی تجاویز سے آگاہ کیا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here