قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس: کورونا وائرس کے باعث ملک بھر میں تعلیمی ادارے بند، مغربی سرحد سیل کرنے کا فیصلہ، 23 مارچ کی پریڈ منسوخ

فیصلے کا اطلاق نجی و سرکاری اسکولز، کالجز، جامعات اور مدارس پر ہوگا، تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق 27 مارچ کو دوبارہ مشاورت ہوگی: وزیر تعلیم

322
وزیر اعظم عمران خان قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں، فوٹو: پی آئی ڈی

اسلام آباد: قومی سلامتی کمیٹی نے کورونا وائرس کے پھیلائو کے خطرے کے پیش نظر ملک بھر کے تعلیمی ادارے 5 اپریل تک بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ایران اور افغانستان کے ساتھ سرحد کو بھی آئندہ 15 روز کے لیے بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا جبکہ 23 مارچ کو یوم پاکستان کی تقریبات بھی منسوخ کردی گئی ہیں۔

قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس جمعہ کو وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ہوا جس میں چاروں صوبائی وزرائے اعلیٰ اور عسکری قیادت نے بھی شرکت کی۔

اجلاس میں کورونا وائرس کی روک تھام سےمتعلق حکمت عملی پرغور کیا گیا اور معاون خصوصی برائے صحت ظفرمرزا نے شرکاء کو صورتحال سے آگاہ کیا۔

تعلیمی ادارے بند رکھنے کا فیصلہ

اجلاس کے بعد سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹوئٹ کرکے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ قومی سلامتی کمیٹی نے ملک بھر کے تعلیمی ادارے 5 اپریل تک بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے، فیصلے کا اطلاق نجی و سرکاری اسکولز، کالجز، جامعات اور مدارس پر ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق 27 مارچ کو دوبارہ مشاورت کی جائے گی اور آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائےگا۔

یہ بھی پڑھیے: 

کورونا وائرس، ٹرمپ کا 26 ممالک پر سفری پابندیوں کا اعلان، سٹاک مارکیٹس، تیل کی عالمی منڈیوں میں گراوٹ

کورونا وائرس کا خوف ، ٹویٹر کا دنیا بھر میں دفاتر بند کرنے کا اعلان

کورونا وائرس پاکستان کی معیشت کیلئے کس حد تک تباہ کن ثابت ہو سکتا ہے؟ 

مغربی سرحد بند کرنے کا فیصلہ

اجلاس کے بعد وزارت داخلہ کے جاری کردہ نوٹی فکیشن میں کہا گیا ہے کہ قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے فیصلے کی روشنی میں افغانستان اور ایران کے ساتھ پاکستان کا مغربی بارڈر 14 روز کے لیے بند کیا جارہا ہے۔

نوٹی فکیشن کے مطابق یہ فیصلہ تینوں برادر ممالک کے بہترین مفاد میں کیا گیا ہے جس کا اطلاق 16 مارچ سے ہوگا۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ قوم کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، صوبائی اور وفاقی حکومتیں  صورتحال پرنظر رکھے ہوئے ہیں، پاکستان میں کورونا وائرس کی وبا کنٹرول میں ہے۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ مغربی سرحد کو آئندہ پندرہ روز کیلئے بند کرنا ہوگا، رائے ونڈ کے اجتماع کو بھی مختصر کردیاگیا ہے۔

’شادیوں، عوامی اجتماعات سے گریز کریں‘

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سنیما گھروں، شادیوں اور عوامی اجتماعات سے گریز کی اپیل کی۔

انہوں نے کہا کہ جن ممالک نے پیشگی اقدامات نہیں کیے تھے وہ نقصان اٹھا رہےہیں، ہمیں لوگوں کو آگاہ کرنے کی ضرورت ہے، غیر ضروری سفر سےگریز کیاجائے، غیر ضروری سفر سےگریز کرنا عوام کیلئے بہتر ہے، ہمیں بڑے بڑے میلوں کو نظر انداز کرناہوگا، صوبائی حکومت روزانہ کی بنیاد پر صورتحال کی نگرانی کریں، جیل میں موجود قیدیوں سے ملاقات کرنےوالوں کو کچھ وقت کیلئے احتیاط کرناہوگا، ایک مضبوط حکمت عملی کے تحت اس وبا سے مقابلہ کرناہوگا۔

ذرائع کے مطابق کورونا وائرس کے باعث اس بار یوم پاکستان کے حوالے سے ہونے والی پریڈ  بھی منسوخ کر دی گئی ہے۔

کورونا وائرس کے باعث دنیا بھر میں کھیلوں  کے ایونٹس اور نمائشیں بھی منسوخ  کی جا رہی ہیں، جنوبی کوریا میں ہونے والا دنیا کا سب سے بڑا ٹیلی کام میلہ بھی کورونا وائرس کی وجہ سے منسوخ کر دیا گیا ہے جب کہ امریکا سمیت کئی ممالک میں بڑے اجتماعات پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

کورونا وائرس کی صورتحال

یاد رہے کہ عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کورونا وائرس کو عالمی وبا قرار دے چکا ہے، پاکستان میں کورونا وائرس کے اب تک 22 مریض سامنے آ چکے ہیں جن میں سے زیادہ تر کا تعلق کراچی سمیت سندھ کے مختلف علاقوں سے  ہے۔

اب تک سندھ میں 16 (15 کراچی اور ایک حیدرآباد)، گلگت بلتستان میں 3، اسلام آباد میں 2  مریضوں میں کورونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے، جب کہ کوئٹہ میں ایک کیس سامنے آیا ہے۔

ان 22 کیسز میں سے کراچی میں زیرعلاج 2 مریض مکمل طور پر صحتیاب بھی ہو چکے ہیں۔

جمعہ کو پاکستان میں کورونا وائرس کا مقامی طور پر منتقل ہونے والا پہلا کیس سامنے آیا جس کی تصدیق کرتے ہوئے وزیر صحت سندھ کی میڈیا کوآرڈینیٹر میران یوسف نے کہا کہ کراچی میں سامنے آنے والا نیا کیس مقامی طور پر منتقلی کا ہے کیوں کہ مریض نے بیرونِ ملک کوئی سفر نہیں کیا۔

محکمہ صحت سندھ کے مطابق 52 سالہ شخص 2 روز قبل اسلام آباد سے کراچی پہنچا تھا جس میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی۔

خیال رہے کہ کورونا وائرس 125 سے زائد ملکوں تک پھیل گیا ہے، دنیا بھر میں ہونے والی اموات کی تعداد5 ہزار سے زائد ہوگئی ہے۔

دنیا بھر میں ایک لاکھ 38 ہزار سے زائد کیسز رپورٹ ہوئے،اب تک 70 ہزار سے زائد صحت یاب ہوچکے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here